اردو

ایران | روحانی: ایرانی قوم دباؤ میں نہیں آئے گی


ایرانی صدر حسن روحانی نے ہفتہ کے روز قومی اینٹی کورونا ہیڈ کوارٹرز کے اجلاس میں کہا ہے کہ اس سال عزادار، معاشرتی فاصلے اور ماسک کے ساتھ شان و شوکت سے امام حسین علیہ السلام کی مجالس برپا کریں گے۔

ایران کے صدر نے زور دے کر کہا ہے کہ مجالس ، محتاط منصوبہ بندی کے ساتھ اس طرح سے منعقد کی جانی چاہئے کہ ایران کو دوسرے ممالک اور شیعوں کے لئے بھی نمونہ بنا دے۔

صدر نے مزید کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ ایرانی قوم امریکی جبر کے خلاف کھڑی اور مزاحمت کرتی ہے یہ عاشورا کی ثقافت سے سبق سیکھنے کی وجہ سے ہے اور اس ثقافت نے ہمارے لوگوں کو مضبوط اور با ہمت بنا دیا ہے۔

ڈاکٹر روحانی نے رمضان کے مقدس مہینے کے دوران مذہبی اجتماعات کے انعقاد اور اس مہینے کے دوران لوگوں کے پروٹوکول کی پیروی کرنے کے اچھے تجربے کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ خوش قسمتی سے رمضان کے مقدس مہینے کے دوران مذہبی تقاریب کا انعقاد اس طرح تھا کہ جس سے کورونا کے پھیلاو کی روک تھام ہوئی۔

صدر نے مزید کہا کہ اس عظیم قوم نے یہ بات اچھی طرح سے ثابت کردی ہے کہ وہ دشمنوں کے دباؤ اور زیادتی کے مقابلہ میں کبھی گھٹنے نہیں ٹیکیں گے۔

صدر نے مزید کہا کہ جو لوگ عیدالاضحی کے موقع پر غریبوں میں قربانی کا گوشت تقسیم کر کے معاشی طور پر ان کی مدد کر سکتے ہیں ان کو یہ احسن عمل انجام دینا چاہئے۔

صدر نے مزید کہا ہے کہ خوش قسمتی سے اطلاعات کے مطابق کچھ صوبوں میں پروٹوکول کے نفاذ اور لوگوں کی کوششوں کے ساتھ ہم اس مرض کو شکست دینے میں کامیاب ہو گئے ہیں اور کچھ صوبوں میں جہاں بیماری کا عروج ہے ہمیں وہاں لازمی طور پر زیادہ سے زیادہ احتیاط کی ضرورت ہے۔