اردو

لبنان | حسان دیاب: فرانس بجلی اور آئی ایم ایف کے ذریعے ہماری مدد کرے


لبنان کے وزیر اعظم حسان دیاب نے آج فرانسیسی وزیر خارجہ کا استقبال کیا۔

لبنان آج آپ کو ایک تاریخی دوست کی حیثیت سے دیکھ رہا ہے کیونکہ فرانس ہر مشکل صورتحال میں لبنان کے شانہ بشانہ ہمیشہ کھڑا رہا ہے اور ہمیں یقین ہے کہ آپ لبنان کو کبھی تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہم نے بہت ساری اصلاحات کیں ہیں اور ہمیں بہت سارے چیلنجز کا بھی سامنا کرنا پڑ رہا ہے اور ہم نے دیگر اصلاحات کے لئے ٹائم ٹیبل طے کیا ہے اور ہمیں بجلی کے میدان میں اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ سے قرض حاصل کرنے کے لئے فرانس کے تعاون کی ضرورت ہے۔ ہم پوری شفافیت کے ساتھ کام کر رہے ہیں۔

دیاب نے زور دے کر کہا کہ بدعنوانی سے لڑنے کے لئے ہم نے سب سے پہلے سنٹرل بینک سے آغاز کیا جو لیرا کے خاتمے اور شہریوں کے لئے مالی پریشانی کا سبب بنا اور اس بینک میں بدعنوانی کے ساتھ دوسرے سرکاری اداروں کی بدعنوانی کی نشاندہی کی جائے گی اور اس سلسلے میں شفافیت کے ساتھ ہم کام کو آگے بڑھائیں گے۔

دوسری طرف انہوں نے شامی مہاجرین کے معاملے پر کہا کہ جن علاقوں کو یہ مہاجرین جاتے ہیں وہ خراب معاشی صورتحال کی وجہ سے ان مہاجرین کو قبول نہیں کرتے اور مہاجرین خود ان علاقوں میں راحت محسوس نہیں کرتے اور یہ لبنان کے لئے خطرناک ہے۔
حسان دیاب نے آخر میں فرانس سے مطالبہ کیا کہ وہ لبنان کے سرکاری اسکولز کی حمایت کرے۔