اردو

ایران | اسحاق جہانگیری: پاکستان کو ایران مخالف کارروائیوں کو سنجیدگی سے روکنا چاہئے


ایرانی نائب صدر اسحاق جہانگیری نے بدھ کے روز ایران میں پاکستان کے سفیر رحیم حیات قریشی سے ملاقات کے دوران کہا ہے کہ ایران نے پاکستان کے خلاف کسی بھی سرحدی اقدامات کو روکنے کے لئے حفاظتی اقدامات کئے ہیں اور یہ کہ پاکستان کی طرف سے بھی اسی طرز عمل کی ضرورت ہے۔

اسحاق جہانگیری نے کہا ہے کہ تہران اسلام اقتصادی تعاون کی ترقی کے لئے دونوں ممالک کی مشترکہ سرحدوں پر سلامتی ، امن ، دوستی اور سکون ضروری ہے۔

اسحاق جہانگیری نے اس بات پر زور دیا ہے کہ ایران اور پاکستان کے مابین دوطرفہ تعلقات اور تجارتی اور معاشی تعاون کی سطح کو بہتر بنانا چاہئے انہوں نے مزید کہا کہ ایران پاکستان کے ساتھ تمام شعبوں خصوصا توانائی کے شعبے میں اپنے تعاون کو بڑھانے کے لئے تیار ہے۔

نائب صدر نے علاقائی امور خصوصا اسرائیلی حکومت کے فلسطین کی مظلوم عوام پر مظالم، شام، عراق، افغانستان اور لبنان کے امور سے متعلق دہشت گرد گروہوں سے لڑنے کے لئے تہران - اسلام آباد تعاون کو بڑھانے کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

اسحاق جہانگیری نے زور دے کر کہا کہ خطے کے مسائل کا حل خطے سے باہر کے ممالک کی عدم مداخلت ہے۔

ایران میں پاکستان کے سفیر رحیم حیات قریشی نے دونوں ممالک کی تاریخی، مذہبی اور ثقافتی مشترکات کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ تہران اور اسلام آباد نے ہمیشہ بین الاقوامی فورمز میں ایک دوسرے کا ساتھ دیا ہے۔

رحیم حیات قریشی نے فلسطینی مقاصد کے بارے میں واضح اور فیصلہ کن مؤقف پر قائد انقلاب اسلامی اور حکومت ایران کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ایران نے ہمیشہ ہی مختلف امور خصوصا مسلمانوں اور امت مسلمہ سے وابستہ افراد کے بارے میں مضبوط مؤقف اختیار کیا ہے۔

دونوں ممالک کے مابین 950 کلو میٹر طویل مشترکہ سرحد کا ذکر کرتے ہوئے سفیر نے کہا ہے کہ بارڈر نگرانی سخت کرنے سے انسانی اور منشیات کی اسمگلنگ دونوں کو روکا جائے گا اور سرحدی سلامتی کو بہتر بنایا جائے گا۔