اردو

یمن | یمنی ماہر: سعودی اتحاد نے مارب کا اسٹریٹجک اور تیل سے مالا مال شہر اپنے ہاتھ سے گنوا دیا ہے


یمنی فوجی کے ماہر عابد الثور نے یونیوز کو بتایا ہے کہ فوج اور عوامی رضا کار فورس نے مارب شہر کے 14 میں سے 13 اضلاع پر قبضہ کر لیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ صنعا کے دستے شہر مارب سے صرف چند کلو میٹر کے فاصلے پر ہیں اور شہر کے مضافات میں تعینات فوجیوں کو یمنی فوج نے تباہ اور شکست دے دی تھی اور ہادی اور اصلاحی فوجیں صرف مشرقی راستے کو ہی عبور کرسکتی ہیں۔

دوسری طرف ابھا ہوائی اڈے پر بمباری یمن کی مسلح افواج کے فطری ردعمل میں سعودی اور متحدہ عرب امارات کی فوجوں کے حملوں کے تسلسل پر کی جاتی ہے کیونکہ اس ہوائی اڈے کو بڑے پیمانے پر فوجی کارروائیوں کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس ہوائی اڈے پر بمباری کے ساتھ تمام پروازیں اور سرگرمیاں کئی گھنٹوں کے لئے بند کر دی گئیں تھیں۔

یمنی فوج کی طاقت میں اضافے کے بارے میں انہوں نے کہا ہے کہ یمنی فوج نے 5 سال میں اقتدار حاصل کیا جس سے اس کو 60 سالوں سے محروم رکھا گیا تھا۔ مثال کے طور پر طویل فاصلے، درمیانے فاصلے اور قلیل فاصلے تک مار کرنے والے میزائل حاصل کیے جو جنگ کے منظر کو اپنے حق میں کر دیتے ہیں۔ صوبہ البیڈا کی آزادی ان کامیابیوں اور تبدیلیوں کی ایک اور مثال ہے۔

الثور نے یہ نتیجہ اخذ کیا کہ یمنی قوم نے یہ کامیابییں امریکہ، برطانیہ، اسرائیل، سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سمیت دنیا کے ممالک کے محاصرے اور سازش کے باوجود حاصل کیں۔