اردو

امریکہ | ناسا کے نئے سربراہ نے حلف اٹھا لیا


سابق امریکی سینیٹر بل نیلسن نے ناسا کے نئے ڈائریکٹر کی حیثیت سے حلف لیا ۔ انہوں نے خلائی ریسرچ کے ایک نئے آغاز کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ چاند پر لوٹنا چاہتا ہے ۔

نیلسن نے اپنے عہدے کا حلف لیا اور ناسا کے ڈائریکٹر کی حیثیت سے اپنے سرکاری دور حکومت میں نائب صدر کملا ہیریس کے سامنے بائبل پر ہاتھ رکھ کر حلف لیا ۔ انہوں نے کہا کہ خلا میں نیا دن ہے ۔

واضح رہے کہ نیلسن 1986 میں خلا میں اڑان بھر چکے ہیں جبکہ امریکہ 2024 میں ایک بار پھر چاند پر خلابازوں کو بھیجنے کی امید کرتا ہے ۔

آخری بار 1972 میں اپلو خلائی پروگرام کے ذریعہ ایک شخص چاند پر اترا تھا ۔ آرٹیمیس پروگرام کے ایک حصے کے طور پر ناسا قمری خلائی اسٹیشن کے ذریعہ چاند پر مستحکم موجودگی قائم کرنا چاہتا ہے تاکہ نئی ٹیکنالوجیز کی جانچ کی جاسکے جو مریخ تک انسانی مشن کی راہ ہموار کرسکتی ہیں ۔

2019 میں سابق امریکی نائب صدر مائک پینس نے ناسا سے مطالبہ کیا تھا کہ 2024 تک پہلے مرد اور عورت کو قمری سطح پر بھیجیں ۔ صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ اسی ٹائم ٹیبل کی حمایت کی ہے ۔

اس افتتاحی پروگرام میں سابق صدر براک اوباما کی سربراہی میں ناسا کے ڈائریکٹر چارلی بولڈن نے شرکت کی جبکہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ڈائریکٹر جم بریڈین اسٹائن نے ویڈیو کانفرنس میں شرکت کی ۔

نیلسن نے کہا ہے کہ ان کی موجودگی ملک کے خلائی پروگرام خصوصا ناسا کے نفاذ میں دونوں جماعتوں کے تسلسل اور شمولیت کو ظاہر کرنا ہے ۔